Ehram bandhane ka tareeqa

0
536
All kind of website designing

احرام باندھنے کا طریقہ

قسط نمبر (15)
تصنیف:
حضرت مولانا محمد منیر الدین  جہازی نور اللہ مرقدہ بانی و مہتمم مدرسہ اسلامیہ رحمانیہ جہاز قطعہ گڈا جھارکھنڈ

جب بدن کی صفائی سے فراغت ہوجائے تو سلے ہوئے کپڑے اتار دے اور دو کپڑے نئے سفید بے سلے ایک چادر اور لنگی اوڑھ لے۔ بدن اور کپڑوں میں تیل ، خوشبو جو میسر ہو لگائے۔
عن زید بن ثابت انہ رأیٰ النبی ﷺ یجرد لِاھلالِہِ و غَسَلَ (رواہ الترمذی والدارمی)
زید ابن ثابت سے مروی ہے کہ انھوں نے نبی کریم ﷺ کو دیکھا کہ احرام کے لیے سلے ہوئے کپڑوں سے خالی ہوئے اور غسل فرمایا۔
اس کے بعد دو رکعت نماز پڑھے ۔ سلام پھیر کر قبلہ ہی رو بیٹھے اور سر کھول کر اسی جگہ نیت کرے ، یعنی دل سے یہ ارادہ کرے کہ حج یا عمرہ یا دونوں کا ارادہ کرتا ہوں ۔ اگر زبان سے بھی نیت کے الفاظ کہہ لے ، تو بہتر ہے ۔ اگر صرف عمرہ کی نیت ہو، تو کہے:
أللّٰھم انی ارید العمرۃ فیَسِّرْھا لی و تَقَبَّلْھَا مِنِّی۔
ائے اللہ ! میں نے عمرہ کا ارادہ کیا ہے تو اس کو میرے لیے آسان کر اور میری طرف سے قبول فرما۔
اور حج کا ارادہ ہو تو کہے:
أللّٰھُمَّ انی اریدُ الحَجَّ فَیَسِّرْہُ لِیْ و تَقَبَّلْہُ مِنّی۔
ائے اللہ! میں نے حج کا ارادہ کیا تو اس کو میرے لیے آسان کر اور میری طرف سے اس کو قبول فرما۔
اور اگر حج اور عمرہ دونوں کا ارادہ ہوتو کہے کہ:
أللّٰھُمَّ انی اریدُ الحَج والعمرۃَ فَیَسِّرْہُما لِیْ و تَقَبَّلْھُما مِنِّی۔
الٰہی! میں حج اور عمرہ کا ارادہ رکھتا ہوں ، تو ان دونوں کو میرے لیے آسان کردے اور تو ان دونوں کو میری طرف سے قبول فرما۔
اور اگر عربی میں نہ کہے تو اردو میں کہہ لے۔ اس کے بعد بلند آواز سے تین مرتبہ تلبیہ پڑھے۔ تلبیہ یہ ہے:
لَبّیکَ أللّٰھُمَّ لَبّیکَ، لَبَّیکَ لا شَرِیْکَ لَکَ لَبَّیْکَ اِنَّ الْحَمْدَ وَالنِّعْمَۃَ لَکَ وَالْمُلْکَ، لَا شَرِیْکَ لَکَ۔ (ہدایہ)
اس کے بعد درود شریف پڑھے۔ اس کے بعد جو چاہے دعا مانگے۔ یہ دعا مستحب ہے:
ألْلّٰھُمَّ اِنِّی أسْءَلُکَ رِضَاکَ وَالْجَنَّۃَ وَ اَعُوْذُ بِکَ مِنْ غَضَبِکَ وَالنَّارِ۔
الٰہی! میں تجھ سے تیری رضا اور جنت چاہتا ہوں اور تیرے غضب اور دوزخ سے تیری پناہ ڈھونڈھتا ہوں۔
اِنَّ النبیَ ﷺ کانَ اذا فَرَغَ مِنْ تْلبِیَتِہِ سَءَلَ اللّٰہَ رِضْوانَہُ والجَنَّۃَ واسْتَعفَاہُ بِرَحْمَتِہِ مِنَ النَّارِ (رواہ الشافعی)
نبی کریم ﷺ جب تلبیہ سے فارغ ہوئے تو اللہ تعالیٰ سے ان کی رضا مندی اور جنت اور اس کی رحمت سے دوزخ سے پناہ ڈھونڈتے۔
و فیِ رِوایۃ الدارمی والبیھقی اَنَّ النبیَ ﷺ کانَ یُصَلِّی علیٰ نَفْسِہِ بعدَ تلْبِیَتِہِ۔
نبی اکرم ﷺؑ تلبیہ کے بعد اپنے اوپر درود پڑھتے۔
و رویٰ ابو داود والدارقطنی عن القاسم بن محمد ﷺ أنَّہ قالَ یَستحِبُّ للرَّجُلِ الصلوٰۃ علیٰ النبی ﷺ بعدَ التلْبِیَۃِ ۔
تلبیہ کے بعد مستحب ہے کہ نبی کریم ﷺ پر درود بھیجے۔
اگر پہلا حج ہو، تو فرض کی نیت خاص طور سے کرنا اور زبان سے کہہ لینا بہتر ہے ۔ نیت کرلینے اور تلبیہ پڑھ لینے کے بعد احرام بندھ گیا ۔ اب ان چیزوں سے بچے جس کا کرنا محرم کے لیے منع ہے۔

نیا سویرا لائیو کی تمام خبریں WhatsApp پر پڑھنے کے لئے نیا سویرا لائیو گروپ میں شامل ہوں

شیر
گزشتہ مضمونEhram ka bayan
اگلا مضمونJamiat youth club kia hi ?

تبصرہ کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here