شمس الدین انصاری ہجومی تشدد مقدمہ میں سبھی دس مجرمین کو عمر قید یہ فیصلہ فرقہ پرستوں کے لیے تازیانہ: مولانا محمود مدنی صاحب کا بیان

0
558
All kind of website designing
نئی دہلی ۔۲۵اپریل جمعیۃ علماء ہندکے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی نے جھارکھنڈ ( تینو گھاٹ بوکارو )کی عدالت کے ذریعہ 

مولانا سید محمود اسعد مدنی
مولانا سید محمود اسعد مدنی

شمس الدین انصاری ہجومی تشدد مقدمہ میں سبھی دس مجرموں کو عمر کی قید سزادینے کا خیر مقدم کیا ہے اور اس فیصلے کو ملک میں جاری نفر ت انگیز ماحول میں امید کی ایک کرن سے تعبیر کیا ہے ۔مولانا مدنی نے کہا کہ چند سالو ں میں جھارکھنڈمیں مسلم اقلیت کے خلاف ہجومی تشدد کے کئی واقعات پیش آئے ، اس درمیان سب سے افسوس کی بات یہ تھی کہ ضلعی حکام اور ریاستی سرکار کے چند ذمہ دار افراد کا رویہ نفرت پرستوں کے من مطابق تھا۔ انھوں نے کہا کہ ملک کے کئی حصوں میں فرقہ پرست عناصر منظم طریقے سے اقلیتوں بالخصوص دلتوں اور مسلمانوں کو کسی نہ کسی بہانے بھیڑ بنا کر نشانہ بنارہے ہیں۔ایسا محسوس ہوتاہے کہ ان عناصر کو ملک کے قانون کی گرفت کا کوئی خوف او راپنے کرتوت پر کوئی افسوس نہیں ہے ۔ مولانا مدنی نے اس تناظر میں امید ظاہر کی کہ گزشتہ ماہ رام گڑھ عدالت اور اب بوکارو عدالت کے فیصلوں سے فرقہ پرستوں کے حوصلے پست ہو ں گے اور ان کے لیے سامان عبرت ہوں گے۔انھوں نے کہا کہ عدالت کے یہ فیصلے یقیناًزخموں پر مرہم کا کام کریں گے لیکن اس کے ساتھ یہ بھی ضروری ہے کہ مقتول کے اہل خانہ کو معقول معاوضہ دیا جائے۔ انھوں نے اس سلسلے میں جھارکھنڈ کے وزیر اعلی سے مطالبہ کیا کہ وہ معقول معاوضہ کا اعلان کریں اور یقینی بنائیں کہ اس ان جیسے واقعات رونما نہ ہوں ۔ واضح ہو کہ دھنباد کے رہنے والے شمس الدین انصاری ماہ اپریل 2017ء میں نرا پنچایت ضلع بوکارو اپنے رشتہ کے پاس گئے تھے ، جہاں غیر مسلموں کی ایک بھیڑ نے رشتہ دار کے گھر سے نکال کر بچہ چوری کے بہانے بڑی بے رحمی سے پیٹا تھا ، جس میں دوران علاج ایک ہسپتال میں اس نے دم توڑ دیا، حالاں کہ شمس الدین جس دن آیا تھا اسی دن اس کی موٹر سائیکل چوری ہو گئی تھی جس کی وجہ سے اسے اگلے دن تک وہاں ٹھہرنا پڑا ۔تقریبا ایک سال بعد تینو گھاٹ کی عدالت نے ان سبھی مجرمین کو عمر قید کی سزا کے ساتھ مالی جرمانہ بھی عائد کیا ہے ۔جن لوگوں کو سزاد ی گئی ہے اس میں کشور دسوندھی، سورج برنوال ،چندن دسوندھی،ساگر توری،منوج توری،سونو تو ری،جیتندر ٹھاکر،راج کما ر کوئری اور چھوٹیا کوئری شامل ہیں ، ان پر چودہ چودہ ہزار روپے کا جرمانہ بھی لگایا گیا ہے ، جرمانہ نہ دینے پر چھ ماہ کی اضافی سزا ہو گی ۔ جرمانے میں سے ایک لاکھ بیس ہزار روپے مقتول کے اہل خانہ کو دیا جائے گا ۔

نیا سویرا لائیو کی تمام خبریں WhatsApp پر پڑھنے کے لئے نیا سویرا لائیو گروپ میں شامل ہوں

تبصرہ کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here