پڈوچیری میں فلور ٹیسٹ سے پہلے کانگریس کوپھرجھٹکا،ایک اورممبراسمبلی پارٹی سے مستعفی

0
540
Chief Minister V Narayanasamy accused BJP of planning an
Chief Minister V Narayanasamy accused BJP of planning an "Operation Kamal (lotus)" in the Union Territory
All kind of website designing

پڈوچیری ، ایجنسی : اتوار کو برسراقتدار کانگریس حکومت کو بچانے کی جستجو میں ایک اور دھچکا لگا جب ایک اور ایم ایل اے کے کے لکشمی نارائنن نے پارٹی سے استعفی دے دیا۔ اب کانگریس کے وزیر اعلی وی نارائناسامی کو پیر کو ایوان میں اکثریت ثابت کرنا مشکل ہوگا۔کانگریس کے ایم ایل اے کے لکشمی نارائنن نے اپنا استعفی اسپیکر شیوکولانتھو کو پیش کیا۔ جو پارٹی سے استعفیٰ دینے والے پانچویں ایم ایل اے ہیں۔ کانگریس کو پیر کو ریاستی اسمبلی میں اپنی اکثریت ثابت کرنا ہے۔ پڈوچیری اسمبلی میں کل 33 نشستیں ہیں۔ اس میںتین نامزد کردہ ہیں۔ حکومت کو اپنا وجود بچانے کے لئے 30 ارکان اسمبلی کے ایوان میں اکثریت حاصل کرنا ہوگی۔ 2016 کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس نے 15 نشستیں حاصل کیں۔ اب تک ، کانگریس کے پانچ ممبران اسمبلی پارٹی چھوڑ چکے ہیں۔ ایک قانون ساز کو کانگریس مخالف پارٹی سرگرمیوں کے الزام میں پارٹی سے نکال دیا گیا ہے۔ کانگریس کے پاس اب نو اراکین اسمبلی ہیں جن میں اسپیکر قانون ساز اسمبلی بھی شامل ہے اور انہیں آزاد ممبر کی حمایت حاصل ہے۔ اے آئی این آرسی کے سات ، اے آئی ڈی ایم کے کے چار اور بی جے پی کے تین اورتین (نامزد)ایم ایل اے ہیں۔قابل ذکرہے کہ قائم مقام لیفٹیننٹ گورنر تاملیسائی سندراراجن نے وزیر اعلی وی نارایناسامی کو ہدایت کی ہے کہ وہ 22 فروری (پیر) کو ایوان میں اپنی اکثریت ثابت کریں۔

نیا سویرا لائیو کی تمام خبریں WhatsApp پر پڑھنے کے لئے نیا سویرا لائیو گروپ میں شامل ہوں

تبصرہ کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here